7

پاکپتن: ڈی پی او پاکپتن کی کرائم میٹنگ

ڈسٹرکٹ پولیس پاکپتن
ڈی پی او پاکپتن کی کرائم میٹنگ
ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر پاکپتن عبادت نثار کی زیر قیادت ڈسٹرکٹ پولیس لائنز پاکپتن میں کرائم میٹنگ کا انعقاد کیا گیا۔ جس میں ایس پی انوسٹی گیشن، ڈی ایس پی انوسٹی گیشن، ڈی ایس پی صدر سرکل، ڈی ایس پی ٹریفک، تمام تھانوں کے ایس ایچ اوز کے علاوہ مختلف برانچوں کے انچارجز نے شرکت کی۔ڈی پی او پاکپتن نے باری باری تمام تھانہ جات کی کارکردگی کا جائزہ لیا-

ایس ایچ او رنگشاہ بشیر احمد کو کارکردگی بہتر نہ ہونے کی بناء پر تبدیل لائن کر دیا گیا اور ان کی جگہ ملک حسنات ایس آئی کو ایس ایچ او رنگشاہ تعینات کر دیا گیا-
ڈی پی او پاکپتن نے پولیس افسران سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ آئی جی پنجاب کی ہدائت کے مطابق ہر تھانہ کی سطح پر قبضہ گروپوں، بھتہ خوروں اور رسہ گیروں اور بدمعاشوں کی لسٹیں تیار کی جائیں اور ان کے خلاف کاروائی عمل میں لائی جائے. منشیات فروشوں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا جائے, نیشنل ایکشن پلان کے تحت سرچ آپریشن جاری رکھیں جائیں اور کرائہ داری ایکٹ کے تحت زیادہ سے زیادہ کاروائی کی جائے. ہوائی فائرنگ اور اسلحہ کی نمائش کی کسی بھی صورت اجازت نہ دی جائے۔ اسلحہ کی نمائش کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے اور اگر اسلحہ لائیسنسی ہو تو لائسنس بھی کینسل کروایا جائے۔ مساجد ہائے، امام بارگاہوں اور چرچ ہائے کی سیکیورٹی فول پروف بنائی جائے۔ دربار بابا فرید کی سیکیورٹی کو ہائی الرٹ کیا گیا ہے۔ اشتہاریوں کے خلاف خصوصی مہم کا آغاز کیا گیا ہے۔
ڈی پی او پاکپتن نے تھانوں کی گاڑیوں کے لئے ڈیزل/پٹرول کی حد ختم کر دی ہے اب ضرورت کے مطابق مرضی سے تیل ڈلوایا جا سکے گا اور ساتھ ہی ڈی پی او صاحب کی طرف سے تمام ایس ایچ اوز کو تنبیہہ کی گئی ہے کہ اگر اب پبلک سے ریڈ کے سلسلہ میں کوئی کرپشن کی شکائت موصول ہوئی تو اس پولیس ملازم کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائی جائے گی.
ڈی پی او پاکپتن نے پولیس ملازمان کی فلاح وبہبود کی طرف ایک احسن قدم کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اب پاکپتن سے لاہور کے لئے کار سرکار کے لئے جانے والے پولیس ملازمین کے لئے پولیس بس سروس کا آغاز کیا گیا ہے۔ اس پولیس بس سروس کا روٹ عارفوالہ- پاکپتن تا لاہور ہو گا اور اسی طرح واپسی ہو گی. پولیس ملازمان کی فلاح وبہبود کو خاص خیال رکھا جائے گا۔
تمام ایس ایچ اوز میرٹ، صلاحیت، قابلیت اور پروفیشنلزم کی بنیاد پر تعینات ہوں گے اور جو ایس ایچ او کارکردگی برقرار نہیں رکھے گا اسے تبدیل کر دیا جائے گا۔ ڈی پی او پاکپتن
ترجمان پاکپتن پولیس

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں